Doomsday: An Excerpt from Dawn Urdu


مولانا قیامت کب آئے گی؟ جب مچھر مر جائے گا اور گائے بے خوف ہو جائے گی!

مچھر کب مرے گا؟ اور گائے کب بے خوف ہو گی؟ جب سورج مغرب سے نکلے گا!

سورج مغرب سے کب نکلے گا؟ جب مُرغی بانگ دے گی اور مُرغا گونگا ہو جائے گا!!!

اور مرغی بانگ کب دے گی؟ جب کلام کرنے والے چُپ ہو جایں گے اور جوتے کے تسمے باندھے گے!

اور کلام کرنے والے تسمے کب باندھیں گے؟ جب حاکم ظالم ہو جائیں گے اور رعایا خاک چاٹے گی!!

برسوں پہلے پڑھی انتظار حسین کی کتاب ‘بستی’ کی کچھ لائینیں یاد گئیں۔ رعایا تو جانے کب سے خاک کے ساتھ اپنا ہی خون چاٹ رہی ہے۔ مگر جانے قیامت کب آئے گی!

This is excerpt taken from Dawn Urdu

Advertisements